Nazar en ki zuban ki sad poetry

ابھی تو چند لفظوں میـــں سمیٹا ہے تجھے میــــں نــے__!
ابھی تو میـــری کتابوں میـــں تیــــری تفسیر باقی ہــے__!

نظر ان کی زبان ان کی تعجب ہے کہ اس پر بھی
نظر کچھ اور کہتی ہے زبان کچھ اور کہتی ہے
ذرا سوچ کے دل توڑا کرو

صاحب💔 ہر گناہ کی بخشش نہیں ہوتی……‏
وہ بھی تو روز پیار میں کرتے رہے ستم
میں نے بھی اب کی بار کے اچھا نہیں کیا

Sad poetry 2020
Sad poetry 2020

موسم کی ادا آج بھی پر کیف ہے لیکن
اک گزری ہوئی برسات کی حسرت نہیں جاتی

nazar un ki zabaan un ki taajjub hai ke is par bhi
nazar kuch aur kehti hai zabaan kuch aur kehti hai
zara soch ke dil tora karo

Leave a Comment