tehzeeb hafi poetry in urdu – tehzeeb hafi poetry status

tehzeeb hafi poetry

tehzeeb hafi poetry status
tehzeeb hafi poetry status tehzeeb hafi poetry

read this tehzeeb hafi poetry in urdu and share it in yours please.

اگر یہ شام شرماتی رہیگی
محبت ہاتھ سے جاتی رہیگی
یہ جنگھلی پھول میرے بس میں کب ہے
یہ لرکی یونہی جزباتی رہیگی
دریچوں سے ہوا آئے نہ آئے
تیری آواز تو آتی رہیگی
تجھے میں اس طرح چھوتا رہا تو
بدن کی تازگی جاتی رہیگی

tehzeeb hafi poetry in urdu❤

اسکی زبان میں اتنا اثر ہے کہ نصف شبا
وہ روشنی کی بات کرے اور دیاجلے

تم چاہتے ہو تم سے بچھڑکے بھی خوش رہوں
یعنی ہوا بھی چلتی رہے اور دیا جلے

گلی سے کوئی بھی گزرے تو چونک اٹھتا ہوں
نئے مکان میں کھڑکی نہیں بناؤں گا
(تہزیب حافی)

یہ میں نے کب کہا کہ میرے حق میں فیصلہ کرے
اگر وہ مجھ سے خوش نہیں ہے تو مجھے جدا کرے
میں اس کے ساتھ جس طرح گزارتا ہوں زندگی
اسے تو چاہیے کہ میرا شکریہ ادا کرے

This is what I said to decide for my favor
If he is not happy with me then separate me
The way I spend with her life
He should be thankful to me
Tehzeeb hafi poetry

تری قید سے میں یونہی رِہا نہیں ہو رہا
مِری زندگی ! ترا حق ادا نہیں ہو رہا

ترے جیتے جاگتے اُور کوئی مِرے دل میں ہے
مِرے دوست ! کیا یہ بہت بُرا نہیں ہو رہا

مِرا موسِموں سے تو پھر گِلہ ہی فضول ہے
تجھے چُھو کے بھی میں اگر ہَرا نہیں ہو رہا

کوئی شعر ہے جو میں چاہ کر بھی نہ لکھ سکا
کوئی واقعہ ہے جو رُونُما نہیں ہو رہا

یہ جو ڈگمگانے لگی ہے تیرے دیے کی لَو
اسے مجھ سے تو کوئی مسئَلہ نہیں ہو رہا

*tehzeeb hafi poetry in urdu*

I am not going to be freed from the prison.
Merry life! Your right is not being paid

If you win, someone is in my heart.
My friend! Isn’t it getting too bad

The complaint is useless with my friends.
Even if i touch you, I am not getting hurt.

Is there any poetry that I could not write even if I wanted
There is an event that is not going to be a

The one who has started to stagger, is the one who is
He doesn’t have any problem with me.

tehzeeb hafi poetry in urdu

پرائی آگ پہ روٹی نہیں بناؤں گا
میں بھیگ جاؤں گا چھتری نہیں بناؤں گا
اگر خدا نے بنانے کا اختیار دیا
علم بناؤں گا برچھی نہیں بناؤں گا
فریب دے کے ترا جسم جیت لوں لیکن
میں پیڑ کاٹ کے کشتی نہیں بناؤں گا
گلی سے کوئی بھی گزرے تو چونک اٹھتا ہوں
نئے مکان میں کھڑکی نہیں بناؤں گا
میں دشمنوں سے اگر جنگ جیت بھی جاؤں
تو اُن کی عورتیں قیدی نہیں بناؤں گا
تمہیں پتا تو چلے بے زبان چیز کا دکھ
میں اب چراغ کی لو ہی نہیں بناؤں گا
میں ایک فلم بناؤں گا اپنے ثروت پر
اور اُس میں ریل کی پٹری نہیں بناؤں گا
تہذیب حافی

I will not make bread on the fire.
I will get wet, I won’t make umbrella.
If God gave the option to make
I will make knowledge, I will not make a
Let me win your body by deception but
I won’t make a boat cut.
If anyone passes through the street then I am surprised.
I will not make a window in the new house
If I win the war with enemies
So their women won’t make a prisoner
You know the pain of the tongue
I will not make the lamp of the lamp anymore.
I will make a movie on my sarwat
And I won’t make a rail monorail.

تیرا چپ رہنا میرے ذہن میں کیا بیٹھ گیا
اتنی آوازیں تجھے دیں کہ گلا بیٹھ گیا

یوں نہیں ہے کہ فقط میں ہی اسے چاہتا ہوں
جو بھی اس پیڑ کی چھاؤں میں گیا بیٹھ گیا

اتنا میٹھا تھا وہ غصے بھرا لہجہ مت پوچھ
اس نے جس جس کو بھی جانے کا کہا بیٹھ گیا

اپنا لڑنا بھی محبت ہے تمہیں علم نہیں
چیختی تم رہی اور میرا گلا بیٹھ گیا

اس کی مرضی وہ جسے پاس بٹھا لے اپنے
اس پہ کیا لڑنا فلاں میری جگہ بیٹھ گیا

بزمِ جاناں میں نشستیں نہیں ہوتی مخصوص
جو بھی اک بار جہاں بیٹھ گیا، بیٹھ گیا

Tehzeeb Haafi poetry

What is your silence in my mind?
Give so many voices to you that the throat is sitting

Not that only I want it
Whoever went to the shade of this tree sat down

It was so sweet, don’t ask for a angry tone.
The one who said to go, sat down

You love fighting too, you don’t know.
Screaming you and my throat sat

His choice is the one who can take his own
What to fight on him, he sat in my place.

I don’t have seats in my beloved darling.
Whoever sat down once, sat down

tehzeeb hafi poetry in urdu

Leave a Comment